طب کا نوبل

2021کاطب کا نوبل پرائزدوامریکی سائنس دانوں نے جیت لیا

سٹاک ہوم (رپورٹنگ آن لائن)رواں سال شعبہ طب اور فزیالوجی کا نوبل پرائز دو امریکی سائنسدانوں ڈیوڈ جولیئس اور اردم پاتاپوتیان کو دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔ ان دونوں نے انسانی بدن کے ٹمپریچر کی مناسبت سے اہم سائنسی دریافتوں کو عام کیا تھا۔میڈیارپورٹس کے مطابق نوبل پرائز کمیٹی کے سیکرٹری جنرل تھوماس پیرلمین نے رواں برس کے دنیا میں معتبر ترین قرار دیے جانے والے نوبل انعامات کے پہلے پرائز کا اعلان کیا۔نوبل کمیٹی کے مطابق ڈیوڈ جولیئس اور اردم پاتاپوتیان کو درجہ حرارت اور لمس یا چھونے کے احساس کے لیے ذمے دار ریسیپٹرز کی دریافت پر یہ انعام دینے کا فیصلہ کیا گیا۔نوبل کمیٹی نے مزید کہا کہ ان دونوں نے حقیقت میں فطرت کے مخفی راز آشکار کیے ہیں اور ان سے انسانی بقا کو تحفظ حاصل ہوا۔

انہی دونوں سائنسدانوں کو گزشتہ برس ایک اور اہم پرائز کاولی انعام برائے نیورو سائنسز سے نوازا گیا تھا۔اردم پاتاپوتیان نے انسانی درجہ حرارت جاننے کا ایک اور طریقہ وضع کیا، انہوں نے انسانی خلیے سے مکینیکل سینسر کی مدد سے ٹمپریچر معلوم کرنے کا پتہ چلایا۔ نوبل انعام کمیٹی نے ان دونوں طریقوں کو انسانی بقا کے تناظر میں نہایت اہم قرار دیا۔لبنانی نژاد امریکی مولیکولر بیالوجی کے سائنسدان اردم پاتاپوتیان بنیادی طور پر آرمینیائی نسل سے تعلق رکھتے ہیں۔ انہوں نے نوبل انعام ملنے کا اعلان اپنے بیٹے کے ساتھ بستر پر لیٹے ہوئے سنا۔نوبل انعام کمیٹی کے مطابق پینسٹھ سالہ ڈیوڈ جولیئس نے مرچ کے ایک جزو کو تلاش کر کے انسانی اعصابی نظام میں موجود حرارت سے جسم کے اندرونی درجہ حرارت کے بارے میں بنیادی معلومات ظاہر کیں۔