شیری رحمان

متحدہ حکومت کو مزید مشکل فیصلے کرنے پڑیں گے، شیری رحمان

اسلام آ باد (رپورٹنگ آن لائن ) وفاقی وزیر شیری رحمان نے کہا ہے کہ سابق حکومت اور حکمرانوں کی وجہ سے مشکل فیصلے کیے اور ابھی متحدہ حکومت کو مزید مشکل فیصلے کرنے پڑیں گے۔

اسپیکر راجہ پرویز اشرف کی زیرصدارت قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے وفاقی وزیر شیری رحمان نے کہا کہ ہم نے ملک کو بچانے کیلئے مشکل فیصلے کیے، حکومت مشکل فیصلے نہ کرتی تو پاکستان دیوالیہ ہونے جارہا تھا۔ شیری رحمان نے کہا کہ چار سال تک راج کرنے والوں نے ملک کو دیوالیہ کرنے کی کوشش کی جس کے بعد تباہی اور تبدیلی سرکار اس مشکل بجٹ کی ذمہ دار ہے۔

انہوں نے کہا کہ روپیہ کی بے قدری اور آئی ایم ایف سے معاہدہ ہمارے لیے بھی مشکل قدم تھا لیکن پی ٹی آئی آج بھی ملک کو جلانے کی طرف لے جانا چاہتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی قوم کو 41 ارب قرضوں کا تحفہ دیکر گئی ہے جبکہ آئی ایم ایف کے پیسوں پر انہوں نے شاہ خرچیاں کیں اور امپورٹڈ ہمیں کہہ رہے ہیں۔ شیری رحمان نے کہا کہ آج عوام آلو ٹماٹر پیاز کی قیمتوں میں اضافے کا سوال کر رہی ہے، قوم سوال کرتی ہے آپ نے ان کی تباہی کو کیوں اپنے گلے ڈالا؟ اس حوالے سے انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال کی وجہ سے ہماری راتوں کی نیند اڑ گئی ہے اور اب غریب سے زیادہ ہماری اشرافیہ کو قربانی دینی ہوگی۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران نیازی ملک کو دلدل میں پھنسا کر گیا ہے اس میں کوئی شک نہیں ہے جبکہ احتساب سرکار کے دور میں ملک میں کرپشن میں اضافہ ریکارڈ ہوا ہے۔