شی جن پھنگ

شی جن پھنگ اور ان کے والد محترم

“آپ ایک بوڑھے بیل کی طرح  ہمیشہ خاموشی سے چینی عوام کی خدمت میں مصروف رہتے ہیں۔ آپ کے اس عظیم طرز عمل سے مجھے بھی یہ ترغیب ملتی ہے کہ میں اپنی پوری زندگی عوام کی خدمت کے لیے وقف کر دوں۔” شی جن پھنگ نے ایک بار اپنے والد محترم جناب شی جونگ شونگ کو لکھے گئے سالگرہ کے  تہنیتی خط میں ان خیالات کا اظہار کیا تھا۔  شی جن پھنگ نے کہا کہ “میں اپنے والد محترم کے قیمتی اور عمدہ نظریات اور اخلاقی قدریں وراثت میں حاصل کرنے اور انہیں اپنے ذات میں جذب کرنے کاخواہاں ہوں  جن میں سے ایک “عوام کی خدمت  کا جذبہ” ہے۔

شی جونگ شونگ
شی جن پھنگ
شی جونگ شونگ ایک “عوامی لیڈر تھے جو عوام سے نکلے تھے”۔ وہ اکثر کہا کرتے تھے کہ وہ ایک کسان کے بیٹے ہیں، اور ہمیشہ اپنے آپ کو محنت کش لوگوں میں سے ایک سمجھتے ہیں۔ شی جن پھںگ نے کہا کہ “میرے دادا بھی ایک کسان تھے، اور میرے والد نے ایک کسان کے طور پر انقلابی راستے پر سفر کا آغاز کیا، اور میں خود سات سال سے بطور کسان کام کر رہا تھا۔” کسانوں کے لیے یہ سادہ سا احساس ہمیشہ شی جن پھنگ کے دل پر نقش رہا ہے۔

1973 میں شی جن پھنگ  (بائیں سے دوسرے نمبر پر) یان چھوان کاؤنٹی، شان سی صوبے میں
شی جن پھنگ
ایک مضمون میں شی جن پھنگ نے خود کو زرد زمین کا بیٹا کہا ہے۔ 1969 میں، شی جن پھنگ، جن کی عمر 16 سال سے کم تھی، بیجنگ سے پس ماندہ صوبہ شان سی کے گاؤں لیانگ جیا حہ  پہنچے اور یہاں ایک کسان کے طور پر  2,400 دن گزارے۔ مقامی کسانوں کے ساتھ کھیتی باڑی کرنے اور محنت کرنے کے ذریعے انہوں  نے نہ صرف مقامی لوگوں کے ساتھ گہری دوستی قائم کی، بلکہ گہرائی سے سمجھ لیا کہ چین کے دیہی علاقے کیا ہیں، عام لوگوں کی خوشیاں اور غم کیا ہیں، اور چین کے بنیادی قومی حالات کیا ہیں۔ عوام کی طرف سے آنا اور لوگوں میں گھل مل جانا کمیونسٹ شی جن پھنگ اور ان کے والد کا دو نسلوں کا غیر متزلزل اصل عقیدہ  ہے۔
شی جن پھنگ نے ہمیشہ اپنے والد کے الفاظ کو ذہن میں رکھا ہے۔ شی جن پھنگ نے بارہا اس بات کا تذکرہ کیا ہے کہ “ملک عوام کا ہے، اور عوام ہی ملک کے اصل مالک ہیں” ۔

” 30 دسمبر 2012 کو، شی جن پھنگ صوبہ حہ بے  کے پس ماندہ علاقے کے غریب باشندوں کے ساتھ گفتگو کرتےہوئے

کمیونسٹ پارٹی آف چائنا  کی 18ویں قومی کانگریس کے بعد سے، شی جن پھنگ نے 14 انتہائی غربت کے شکار  علاقوں کا سفر کیا ہے، اور غربت کے خاتمے کے کام کے حوالے سے 50 سے زیادہ تحقیقی  دورے کئے۔ “میری کوئی ذاتی خواہش  نہیں ہوگی اور میں عوام کی امنگوں پر پورا اتروں گا۔” یہ بالکل وہی عقیدہ اور کاوش ہے جس پر شی جن پھنگ اور ان کے والد عمل پیرا رہے ہیں۔