پی سی ٹی بی کے ڈائریکٹر پروڈکشن اختر بٹ کی ایکسٹینشن چیلنج

شہباز اکمل جندران۔۔۔

پنجاب کریکولم اینڈ ٹیکسٹ بک بورڈ کے قائمقام ڈائریکٹر پروڈکشن اختر بٹ کی تین سال کے لیے ایکسٹینشن غیر قانونی ہے۔ اختر بٹ کو فی الفور ملازمت سے الگ کرتے ہوئے انہیں ایکسٹینشن دینے والوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے۔ایسا موقف اختیار کیا ہے شہری نے اپنی درخواست میں، جو صوبائی سیکرٹری سکولز پنجاب کو لکھی گئی ہے۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ اختر بٹ 10اکتوبر2016کو بطور ڈپٹی ڈائریکٹر پروکیورمنٹ تین سالہ کنٹریکٹ پر بھرتی کیا گیاجبکہ ان کے اپوائنٹمنٹ لیٹر کی کلاز2کے مطابق انہیں صرف تین سال کے لیے ریکرو ٹ کیا گیا تھا۔تاہم تین سالہ مدت پوری ہونے کے بعد 26دسمبر 2019کو انہیں ملازمت میں ایک سال کی توسیع دیدی گئی۔
پی سی ٹی بی
جو 23اکتوبر2020کو پوری ہوگئی۔اسی دوران اختر بٹ کو ڈپٹی ڈائریکٹر پروکیومنٹ کے ساتھ ساتھ ڈائریکٹر پروڈکشن جیسی پرکشش سیٹ سے بھی نواز دیا گیا۔ 24اکتوبر2020سے انہیں ملازمت میں ایکبار پھر ایک سال کی توسیع دیدی گئی جو 23اکتوبر2021کو ختم ہوگئی لیکن پی سی ٹی بی کے مینجنگ ڈائریکٹر اور دیگر اختر بٹ کو کسی صورت چھوڑنے کو تیار نہیں تھے اور انہوں نے آئے روز کی ایکسٹینشنز سے جان چھڑانے کے لیے چہیتے اختر بٹ کو قانون کی خلا ف ورزی کرتے ہوئے بورڈ سے ایک ہی بار تین سال کے لیے23اکتوبر2024تک ایکسٹینشن دلوادی ہے۔جبکہ ڈائریکٹر پروڈکشن کا عہدہ بھی بدستور اختر بٹ ہی انجوائے کررہا ہے۔