اسلام آباد ہائیکورٹ

اسلام آباد ہائیکورٹ الیکشن ایکٹ2017میں ترمیم کیخلاف درخواست پر وفاقی حکومت سے جواب طلب

اسلام آباد (رپورٹنگ آن لائن ) اسلام آباد ہائیکورٹ نے الیکشن ایکٹ 2017ء میں ترمیمی آرڈیننس کیخلاف درخواست پر وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کر کے جواب طلب کر لیا‘ عدالت نے صدر مملکت کے سیکرٹری اور اٹارنی جنرل کو بھی نوٹس جاری کئے ‘ اٹارنی جنرل کو 15مارچ کو عدالت کی معاونت کی ہدایت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق نے سابق چیئرمین یونین کونسل سردار مہتاب کی درخواست پر سماعت کی۔عدالت نے اٹارنی جنرل کو آئندہ سماعت پر 15 مارچ کو عدالت کی معاونت کرنے کی ہدایت کردی۔

درخواست گزار کی جانب سے عادل عزیز قاضی ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے۔سماعت کے دوران جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ آرڈیننس کے ذریعے کیا ترمیم کی گئی ہے؟وکیل درخواست گزار عادل قاضی ایڈووکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ الیکشن ایکٹ میں ترمیم کر کے پبلک آفس ہولڈرز کو انتخابی مہم میں حصہ لینے کا اہل بنایا گیا ہے۔

ایڈووکیٹ عادل قاضی نے عدالت کو بتایا کہ ترمیمی آرڈیننس حکومتی بدنیتی پر مبنی ہے، ترمیم کیلئے ہنگامی صورتحال نہیں تھی۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ حکومت نے آرڈیننس کا ڈرافٹ پہلے ہی تیار کر رکھا تھا۔درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ حکومت نے پارلیمنٹ کا سیشن ملتوی ہونے کے فوری بعد ترمیمی آرڈیننس جاری کیا۔

وکیلِ درخواست گزار سابق چیئرمین یونین کونسل سردار مہتاب نے عدالت کو بتایا کہ قانون سازی سے بچنے اور آرڈیننس کے اجرا کے لیے پارلیمنٹ کا سیشن ملتوی ہونے کا انتظار کیا گیا۔ قانون سازی کیلئے پارلیمنٹ کے اجلاس کا انتظار کیا جا سکتا تھا۔