لاہور جنر ل ہسپتال

جنرل ہسپتال: جشن آزادی کی تقریب، پرچم کشائی اور کیک کاٹا گیا

لاہور(زاہد انجم سے) قائد اعظم ؒ اور پاکستان کے احسانات چکانے کا صرف ایک ہی طریقہ ہے کہ قوم کے تمام نوجوان اپنی اپنی فیلڈ میں مہارت کا ملکہ حاصل کریں تاکہ ہمیں دیگر قوموں کی طرف اپنی ضرورت کیلئے ہاتھ نہ بڑھانا پڑے۔
ان خیالات کا اظہا ر وائس پرنسپل پوسٹ گریجویٹ میڈیکل انسٹی ٹیوٹ پروفیسر ڈاکٹر محمد معین نے لاہور جنر ل ہسپتال میں جشن آزادی کی مناسبت سے منعقدہ پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر نرسنگ کالج کی طالبات نے سبز آنچل اوڑھ کر قومی ترانہ و ملی نغمے پڑھے اور حاضرین سے خوب داد سمیٹی۔ پروفیسر محمد حنیف،، پروفیسر جودت سلیم، ڈاکٹر ریاض حفیظ، ڈاکٹر عرفان ملک، ڈاکٹر عبدالعزیز،نرسنگ سپرٹینڈنٹ میمونہ ستار، انور سلطانہ،شہناز ڈار، خالدہ تبسم، رانا پرویز، سمیت ڈاکٹرز، نرسز اور پیرا میڈیکل سٹاف کی کثیر تعداد نے تقریب میں شرکت کی۔

لاہور جنر ل ہسپتال
پروفیسر محمد معین نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ میڈیکل کے ہر شعبہ سے وابستہ افراد ملک و قوم کی خدمت کرنے کا منفرد موقع رکھتے ہیں اور و ہ میڈیکل کی تعلیم و ریسرچ میں ہونے والی جدید ترقی و رجحانات سے اپنے آپ کوپوری طرح لیس کر کے دکھی انسانیت کی خدمت و دیکھ بھال اور قومی خدمت کا فریضہ با آسانی پورا کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ14اگست ہمیں اپنے اس عزم کو بڑھانے اور اس پر ثابت قدم رہنے کے ارادے کے اظہار کا دن ہے کہ ہم ملکی ترقی، خوشحالی،دکھی انسانیت کی خدمت اور معاشرے سے بیماریوں کے خاتمہ کیلئے اپنی تمام تر توانائیاں بے لوث طریقہ پر بروئے کار لائیں گے۔

مسز میمونہ ستار، خالدہ تبسم اور رانا پرویز کا کہنا تھا کہ قیام پاکستان برصغیر کے لاکھوں مسلمان کی عظیم الشان قربانیوں اور بانی پاکستان قائد اعظم ؒ محمد علی جناح کی انتھک جدوجہد کے نتیجہ میں معرض وجود میں آیاہے جو اللہ کی ایک لازوال نعمت ہے، اس پر جتنا بھی شکر ادا کیا جائے کم ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ نئی نسل کو حصول پاکستان کی جدوجہد اور جانی و مالی قربانیوں کے بارے میں تاریخی حقائق سے روشناس کروایا جائے تاکہ اسلاف کی قربانیاں نہ صرف تاریخ میں زندہ رہیں بلکہ طلبہ و طالبات کو بھی مکمل آگاہی حاصل ہو اور وہ مملکت خداداد کی حفاظت، ترقی و خوشحالی کیلئے ہر قسم کی عملی جدوجہد، تعلیم کے حصول اور جدید ٹیکنالوجی میں مہارت حاصل کر کے اقوام عالم میں اپنے ملک کانام روشن کریں۔ تقریب کے اختتام پر کیک کاٹا گیا اور مریضوں میں مٹھائی تقسیم کی گئی۔ کشمیریوں کی آزادی کیلئے خصوصی دعائیں بھی مانگی گئیں۔